The Blanket /کمبل

blanket ستمبر کی خوشگوار رات تھی وادی میں چاند آسمان پر پورے آب وتاب سے چمک رہاتھا لیکن گیا رہ سالہ پیٹر(Peter) نہ ہی چاند کی طرف متوجہ تھااور نہ ہی باورچی خانے میں ستمبر کی سرد ہوا کو محسوس کررہا تھا کیونکہ اس کی تمام ترتوجہ باورچی خانے میں میز پر پڑے ہوئے سرخ اور سیاہ رنگ کے کمبل پر تھی یہ کمبل ابو نے دادا کو تحفے  میں دیا  تھا۔۔۔ ایک جانے والا تحفہ۔ ان کا کہنا تھا کہ چونکہ دادا  گھر سے جارہے ہیں اس لئے انہوں نے کمبل کو جانے والے کا نام دیا تھا مگر پیٹر کو ابھی تک یقین نہیں آرہا تھا کہ ابو دادا کواس کمبل کے ساتھ جانے کا کہیں گے جسے اس نے آج ہی خریدا تھا اور یوں پیٹر کی اپنے دادا کے ساتھ یہ آخری شام تھی

دادا اور پوتے نے اکٹھے رات کا کھانا کھایا کھانے کے برتن دھوئے ابو اس عورت کے ساتھ باہر جاچکے تھے جس سے اس نے شادی کرنا تھی اورکچھ ہی دیر میں واپس لوٹنا تھا جب تمام برتن دھل چکے تو دادا اپنے پوتے کے ساتھ باہر آیا اور دنوں چاند کی روشنی میں بیٹھ گئے۔

Continue reading